کرپٹو کرنسی کیا ہے | ڈیجیٹل کرنسی کیا ہے - کرپٹو کرنسی کام کیسے کرتا ہے

کرپٹو کرنسی کیا ہے، ڈیجیٹل کرنسی کیا ہے - کرپٹو کرنسی کام کیسے کرتا ہے

کرپٹو کرنسی کیا ہے، ڈیجیٹل کرنسی کیا ہے - کرپٹو کرنسی کام کیسے کرتا ہے

کرپٹو کرنسی ایک ڈیجٹل یا مجازی کرنسی ہیں جسے ایک ایکسچینج کے میڈیم طور پر استعمال کیا جاتا ہیں. یہ ایک ڈیجیٹل اثاثہ ہیں جسے آپ چیزوں کو خریدنے کے لیے استعمال کر سکتے ہیں.
اس پوسٹ میں ہم آپ کو بتائیں گے کہ

کرپٹو کرنسی کیا ہے، ڈیجیٹل کرنسی کیا ہے؟

تو چلیں دیکھتے ہیں کہ کرپٹو کرنسی کیا ہے؟

کرپٹو کرنسی کیا ہے؟

کرپٹو کرنسی ایک پیمنٹ کا فارم ہیں جسے آپ آن لائن سامان اور سروسز کو خریدنے کے لیے استعمال کر سکتے ہیں. جس طرح سے لوگ روپے، ڈالر، یورو کا استعمال سامان اور سروسز کے ایکسچینج کے لئے کرتے ہیں ٹھیک اُسی طرح سے کرپٹو کرنسی کا بھی استعمال ایک کرنسی روپے کی طرح کیا جاتا ہے. 

اس کرنسی کو خفیہ نگاری کے ذریعے سے محفوظ کیا گیا ہیں. کرپٹو کرنسی مالی ٹرانزیکشن کے لیے خفیہ نگاری فنکشن کا استعمال کرتا ہیں. یہ blockchain ٹیکنالوجی کے ذریعے سے کنٹرول کیا جاتا ہیں. 

بلاکچائن blockchain ٹیکنالوجی کے مہذب فطرت کی وجہ سے کرپٹو کرنسی کو گورنمنٹ کنٹرول نہیں کرتی ہیں. اور یہی وجہ ہے کہ اس کے قدر کو کنٹرول نہیں کیا جاسکتا ہیں.

کرپٹو کرنسی کا سب سے اہم خصوصیت یہی ہے کہ اسے کوئی کنٹرول اتھارٹی کنٹرول نہیں کرتا ہیں.

نجی اور پبلک چابیاں مطلب keys کا استعمال کرکے کرپٹو کرنسی کو دو پارٹیز کے بیچ میں ڈائریکٹ بھیجا جا سکتا ہیں وہ بھی سیکنڈوں میں.

آج کرپٹو کرنسی پورے دنیا میں زیادہ تر لوگ جانتے ہیں، تو چلیں جانتے ہیں کہ کرپٹو کرنسی کام کیسے کرتا ہیں.


کرپٹو کرنسی کام کیسے کرتا ہے؟

لوگوں کے بیچ میں کرپٹو کرنسی کا لین دین کرپٹو کرنسی وائلٹ “cryptocurrency wallets” سافٹویئر کے استعمال سے ہوتا ہیں. ٹرانزیکشن کرنے والا بندہ اپنے بیلنس کو ایک اکاؤنٹ (ایک پبلک ایڈریس) سے دوسرے اکاؤنٹ میں ٹرانسفر کرنے کے لیے وائلٹ سافٹویئر کا استعمال کرتا ہیں.
فنڈ ٹرانسفر کرنے کے لیے اکاؤنٹ سے ریلیٹڈ پاسورڈ (ایک خفیہ key چابی) کی ضرورت ہوتی ہیں.
لوگوں کے بیچ میں کئے جانے والے لین دین کو خفیہ کیا جاتا ہیں. اور پھر اُسے کرپٹو کرنسی کے نیٹ ورک پہ نشر کیا جاتا ہیں. اور پبلک لیجر (ریکارڈ رکھنے کے نظام) میں شامل کرنے کے لیے قطار میں شامل کردیا جاتا ہیں.

اور پھر لین دین کو پبلک لیجر پہ “mining” عمل کے ذریعے سے ریکارڈ کیا جاتا ہیں. کسی بھی کرپٹو کرنسی کے سب ہی صارفین کے پاس لیڈر کا رسائی ہوتا ہے اگر وہ رسائی کو منتخب کرتا ہیں. 

یہاں پر لین دین مقدار پبلک ہوتا ہیں لیکن ٹرانزیکشن کس نے بھیجا ہے وہ مرموز ہوتا ہے. ہر ایک ٹرانزیکشن کے ساتھ ایک منفرد key کا سیٹ ہوتا ہیں. 

جو بھی اُس key کے سیٹ کو حاصل کرتا ہیں وہ اُس key سے متعلقہ کرپٹو کرنسی کے رقم کا مالک ہوجاتا ہیں، ٹھیک اُسی طرح جس طرح ایک بینک اکاؤنٹ کا مالک اُس اکاؤنٹ میں جتنے بھی پیسے ہوتے ہیں اُس کا مالک ہوتا ہیں. 

ایک ساتھ بہت سے ٹرانزیکشن کھاتے میں شامل کئے جاتے ہیں. ٹرانزیکشن کے ان بلاکس کو miners sequentially شامل کرتے ہیں. یہی وجہ ہے کہ کھاتے اور اس کے پیچھے کے ٹیکنالوجی کو blockchain کہا جاتا ہیں. یہ ٹرانزیکشن کے "بلاکس" کا ایک "chain" ہیں. 


کرپٹو کرنسی کے فائدے اور نقصانات

فوائد
بغیر کسی تیسرے پارٹی (بینک) کے کرپٹو کرنسی کو ڈائریکٹ دو لوگوں کے بیچ میں ٹرانسفر کرنا انتہائی آسان ہیں.
یہ پبلک keys اور نجی keys کی مدد سے محفوظ کیا جاتا ہیں، جس کی وجہ سے یہ انتہائی محفوظ ہیں.
دوسرے پیمنٹ آپشن کے مقابلے میں اس میں لین دین کے چارجز بھی بہت کم ہیں.

نقصانات
سمجھنے کے لئے مشکل ہے - کرپٹو کرنسی نئی ہیں اور اس کے بارے میں لوگوں کو ابھی کچھ زیادہ پتہ معلوم نہیں ہے. لوگ مناسب علم کے بینا اس میں انویسٹ کرکے اپنے پیسے کو ڈوبے سکتے ہیں.

علم کی کمی - لوگوں کو یہ نہیں پتہ کہ کرپٹو کرنسی کو استعمال کیسے کرے اور اس طرح سے وہ ہیکروں کے لیے راستے کھول دیتے ہیں.

وسیع پیمانے پر قبول نہیں کیا جاتا - بہت سارے ویب سائٹ اور کمپنیاں ابھی تک ڈیجٹل کرنسی کو قبول نہیں کرتے ہیں. بہت کم ممالک نے اس کے استعمال کو قانونی شکل دیا ہیں. اس لیے یہ آپ کے ہر روز استعمال کے لیے مثالی نہیں ہیں.

اپنے وائلیٹ کو آپ کھو سکتے ہیں - آپ کو اپنے وائلیٹ کو کھونے کے امکانات بنی رہتی ہیں. اگر آپ ایک بار اپنے کوائنس کو کھو دیتے ہیں تو پھر آپ اس کو واپس نہیں پا سکتے ہیں.

کوئی ریورس ادائیگی نہیں - اگر آپ غلطی سے کسی کو پیمنٹ کر دیتے ہیں تو آپ کے پاس اُس رقم کو واپس لانے کا کوئی آپشن نہیں ہیں.

آخر میں

امید ہے آپ کو کرپٹو کرنسی کا یہ آرٹیکل ( کرپٹو کرنسی کیا ہے ) معلوماتی لگا ہوگا. اگر آپ کا کوئی سوال ہے تو آپ کمنٹ سیکشن میں پوچھ سکتے ہیں. شکریہ

Post a Comment

Previous Post Next Post